7

یو اے ای اور بحرین کا اسرائیل سے سفارتی تعلقات کا معاہدہ طے پاگیا

ٹرمپ کی میزبانی میں وائٹ ہاؤس میں بحرین اور یو اے ای کے حکام کا اسرائیل کو تسلیم کرنے کا معاہدہ، شرکا معاہدہ میڈیا کو دکھاتے ہوئے (فوٹو : اے ایف پی)

ٹرمپ کی میزبانی میں وائٹ ہاؤس میں بحرین اور یو اے ای کے حکام کا اسرائیل کو تسلیم کرنے کا معاہدہ، شرکا معاہدہ میڈیا کو دکھاتے ہوئے (فوٹو : اے ایف پی)

 واشنگٹن /  دبئی: متحدہ عرب امارات اور بحرین نے اسرائیل سے سفارتی تعلقات قائم کرنے کا معاہدہ کرلیا، وائٹ ہاؤس میں امریکی صدر ٹرمپ کی میزبانی میں عرب اور اسرائیلی حکام نے معاہدے پر دستخط کردیے، ٹرمپ نے اس گھڑی کو تاریخی قرار دیا جب کہ فلسطینی حکام نے معاہدے کی مذمت کی۔

امریکی و عرب میڈیا کے مطابق ان ممالک کے درمیان معاہدے ’’ابراہام اکارڈ‘‘ کی دستخطی تقریب امریکی صدر ڈونلڈ جے ٹرمپ کی میزبانی میں وائٹ میں منعقد ہوئی۔ اسرائیل کی جانب سے معاہدے پر دستخط وزیراعظم بینجمن نیتن یاہو، یو اے کی جانب سے وزیر خارجہ شیخ عبداللہ بن زید النہیان اور بحرین کی جانب سے وزیر خارجہ عبدالطیف الزیان نے کیے۔

متحدہ عرب امارات اور بحرین کے بعد اب اسرائیل کو تسلیم کرنے اور سفارتی تعلقات قائم کرنے والے عرب ممالک کی تعداد چار ہوگئی ہے۔ قبل ازیں 1979ء میں مصر اور 1994ء میں اردن اسرائیل کو تسلیم کرکے سفارتی تعلقات قائم کرچکے ہیں۔

متحدہ عرب امارات وزیر مملکت برائے امور خارجہ انور گرگاش نے کہا ہے کہ اسرائیل سے تعلقات بحال کرنے کے ملکی فیصلے نے ’’نفسیاتی دیواروں‘‘ کو گرادیا ہے اور اس سے خطے کی ترقی کی راہ کھلے گی۔

 

 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں