19

امریکی فوج میں اب خواجہ سرا بھی بھرتی ہوسکیں گے

صدر ٹرمپ نے خواجہ سراؤں کی فوج میں بھرتی پر پابندی لگادی تھی، فوٹو : فائل

صدر ٹرمپ نے خواجہ سراؤں کی فوج میں بھرتی پر پابندی لگادی تھی، فوٹو : فائل

 واشنگٹن: امریکا کے نئے صدر جو بائیڈن نے فوج میں خواجہ سراؤں کی بھرتی پر عائد پابندی کو ختم کر دیا۔

امریکی نشریاتی ادارے کے مطابق صدر جوبائیڈن نے خواجہ سراؤں کی فوج میں بھرتی کرنے پر لگائی گئی سابق صدر ٹرمپ کی پابندی کو ختم کرکے ملکی فوج میں خواجہ سراؤں کو بھی بھرتی کرنے کا حکم نامہ جاری کیا ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں امریکی صدر جوبائیڈن نے لکھا کہ خواجہ سراؤں پر فوج میں خدمات انجام دینے پر پابندی کے امتیازی قانون کو منسوخ کرتا ہوں۔ یہ سادہ سی بات ہے کہ امریکا اس وقت محفوظ ہو گا جب ہر اہل فرد اپنی خدمات کھل کر اور فخر کے ساتھ انجام دے سکے گا۔

امریکا میں سب سے پہلے سابق صدر بارک اوباما نے 2016 میں خواجہ سراؤں کو فوج میں شامل کرنے کی اجازت دی تھی تاہم ان کے بعد آنے والے صدر ٹرمپ نے خواجہ سراؤں پر پابندی عائد کر دی تھی۔

یہ خبر بھی پڑھیں : جوبائیڈن نے اپنی حکومت میں خواجہ سرا کو اہم عہدہ دیدیا

صدر جوبائیڈن کی خواجہ سراؤں کی امریکی فوج میں شمولیت کی اجازت کی وزیرِ دفاع اور سابق آرمی جنرل لائڈ آسٹن نے بھی حمایت کی ہے، انہوں نے کہا ہے کہ جو معیار پر پورا اترتے ہیں، انہیں آزادانہ انداز میں بلا امتیاز کام کرنے کا موقع دینا چاہیے۔

امریکی صدر جوبائیڈن اس سے قبل اپنی صحت کی ٹیم میں بھی ایک خواجہ سرا ڈاکٹر کو شامل کرچکے ہیں۔



اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں