23

کیپٹل ہل پر ایک بار پھر حملے کی اطلاعات، واشنگٹں میں سیکیورٹی ہائی الرٹ

کیپیٹل ہل پر حملے کی اطلاعات کے پیش نظر سیکیورٹی کو ہائی الرٹ کردیا گیا ہے۔(فوٹو، فائل)

کیپیٹل ہل پر حملے کی اطلاعات کے پیش نظر سیکیورٹی کو ہائی الرٹ کردیا گیا ہے۔(فوٹو، فائل)

 واشنگٹن: امریکا میں کیپٹل ہل پر ٹرمپ کے حامیوں  کے ایک بار پھر حملے آور ہونے کی اطلاعات پر سیکیورٹی ہائی الرٹ کردی گئی ہے۔

امریکی خبر رساں ادارے کے مطابق انتہائی دائیں بازوں کے سازشی نظریات پھیلانے والے گروہ کیو اے نون(QAnon)  کی جانب سے یہ افواہیں پھیلائی جارہی ہیں کہ 4 مارچ کو ڈونلڈ ٹرمپ ایک بار پھر برسر اقتدار آجائیں گے اور اسی روز ہزاروں لوگ گھروں سے نکل کر ڈیموکریٹس کو اقتدار کے ایوانوں سے اٹھا باہر پھینکیں گے۔

یہ اطلاعات موصول ہوتے ہی جمعرات کو کیپٹل ہل میں سیکیورٹٰی ہائی الرٹ کر دی گئی۔ انٹیلی جینس رپورٹ کے مطابق حکومت مخالف مسلح گروہوں کی کسی بھی ممکنہ پیش قدمی کو روکنے کے لیے کیپٹل ہل کے آس پاس سیکیورٹی میں اضافہ کردیا گیا۔

سیکیورٹی حکام نے نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر بتایا ہے کہ مختلف حکومت مخالف گروہوں کی آن لائن چیٹس میں ایسے منصوبے کے اشارے ملے تھے جن میں مسلح گروہوں کی کیپٹل ہل پر چڑھائی کرنے اشارہ دیا گیا تھا۔

یہ خبر بھی پڑھیے: ٹرمپ کے حامیوں کا کانگریس کی عمارت پر دھاوا

واضح رہے کہ دو ماہ قبل سابق صدر ٹرمپ کے حامیوں نے امریکی دارالحکومت میں کیپٹل ہل پر چڑھائی کردی تھی۔ کیپٹل ہل میں امریکی کانگریس و سینیٹ سمیت دیگر حکومتی ادارے واقع ہیں۔ ٹرمپ کے حامیوں صدر بائیڈن کے انتخابی نتائج کی توثیق روکنے کے لیے کیپٹل ہل پر دھاوا بول دیا تھا، جس کے بعد اس علاقے کی سیکیورٹٰی کے حوالے سے انتظامیہ انتہائی محتاط اور ہوشیار رہتی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں